تعبیرخواب

افسون (افسون :جنتر منتر )(جنتر منتر کرنا )

حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا ہے کہ خواب میں افسون کرنا لوگوں کو فریب کرنا ہے ۔ لیکن خدا تعالیٰ کے اسماء اور آیات قرآن کے ساتھ  ہو اگر ایسے افسون کو خواب میں دیکھے کہ اس کو یا کسی دوسرے کو شفاء (شفا اور راحت : صحت اور خوشی ) اور راحت ہوئی ہے تو دلیل ہے کہ غم سے راحت پا کردلی مراد کو پہنچے گا اور اگر اس کے خلاف دیکھے تو غم اور اندوہ کی دلیل ہے۔ 
حضرت کرمانی رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر افسون میں اللہ تعالیٰ کا ذکر نہ کرے تو خواب میں افسون کرنا باطل (باطل ہے :جھوٹ ہے ) ہے ۔ اور اگر افسون قرآن مجید اور اسماء الٰہی سے کرے تو دلیل ہے کہ اس نے حق اور راستی کا کام کیا ہے اور اس سے اس کو دونوں جہان کی خیر و صلاح ( خیر و صلاح : نیکی اور بہتری ) حاصل ہو گی۔