تعبیرخواب

دستارچہ(دستار)

حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا ہے کہ خواب میں دستار کا دیکھنا دین ہے ۔ اگر دیکھے کہ اس کی پگڑی سفید یا سبز یا السی کی یا سوتی ہے ۔ تو صلاح دین کی دلیل ہے ۔ اور اگر دیکھے کہ دستار اور پاکیزہ رکھتا ہے ۔ دلیل ہے کہ دین اور دنیا کی صلاح ہو گی ۔ اور ابریشم اور ریشم کی پگڑی دنیا کے کاموں کے درستی ہے ۔ اور اگر دیکھے کہ اس کی دستار کے ساتھ دوسری دستار پیوست ہو گئی ہے ۔ دلیل ہے کہ اس کی بزرگی اور مرتبہ زیادہ ہو گا ۔ اور اگر دیکھے کہ اس کی دستار گرگئی ہے اور ضائع ہوئی ہے ۔ تو نقصان دین اور اس کی بے حرمتی کی دلیل ہے ۔
حضرت ابراہیم کرمانی رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا ہے۔اگر اپنی دستار چرائی ہوئی دیکھے تو اس کے مرتبہ اور قدر کی نقصان کی دلیل ہے ۔ اور اگر دیکھے کہ دستار کو پیچ دے کر خوب رکھتا ہے ۔ کہ دنیا داروں اور دین داروں سے موافقت کرے گا ۔
اور اگر نقش دار پگڑی رکھے ۔ دلیل ہے کہ سفر کے درمیان لوگوں میں مشہور ہو گا ۔ اور اگر دیکھے کہ اس کی دستار اور لباس سب سبز ہیں ۔ دلیل ہے کہ دنیا سے شہید ہو کر جائے گا ۔
حضرت جابر مغربی رحمتہ اللہ تعالیٰ نے فر مایا ہے ۔ کہ جس قدر دستار بڑی ہو گی ۔ اس کا مرتبہ اور عزت زیادہ ہو گی ۔ اور اگر دیکھے کہ اس کی دستار میلی ہے تو اس کے مرتبہ اور عزت کے نقصان کی دلیل ہے ۔
اور اگر دستار سرخ دیکھے ۔ دلیل ہے کہ کسی پر ظلم کرے گا اور اگر زرد دیکھے دلیل ہے کہ بیمار ہو گا ۔
ٍ اور اگر دستار نیلی دیکھے ۔ دلیل ہے کہ اس کو مصیبت پہنچے گی ۔ اور اگر سیاہ دیکھے تو اس کو نقصان اور ضرر پہنچے گا ۔ لیکن خطیب اور قاضی کو نقصان نہیں ہے ۔ اور اگر سر پر ابریشم کی دستار دیکھے ۔ دلیل ہے کہ مصنف اور حاکم ہو گا اور لوگ اس کو عزیز جانیں گے اور اگر دیکھے کہ لمبی دستار لپٹی ہوئی ہے ۔ دلیل ہے کہ سفر سے جلدی واپس آئے گا ۔ اور ابریشم کی پگڑی دین کے فساد پر دلیل ہے ۔
حضرت جعفر صادق علیہ السلام نے فرمایا ہے۔ کہ خواب میں دستار کا دیکھنا سات وجہ پر ہے ۔ (۱)دین(۲)ریاست(۳)عمل(۴)ولایت(۵)مرتبہ(۶)توانائی(۷) سفر۔