تعبیرخواب

زندان(قید خانہ)

حضرت ابن سیرین رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایاہے کہ اگر دیکھے کہ وہ قید خانے میں اور قیدیوں کو نہیں دیکھا ہے تو یہ اس کی ہلاکت پردلیل ہے ۔ اور اگر قید خانہ معلوم ہے تو غم واندوہ پر دلیل ہے ۔ اور اگر دیکھے کہ وہ قید خانے کی بیڑی اس کے پاؤں میں پڑی تھی ۔ دلیل ہے کہ اس کا کام دیر تک رہے گا اور غم وفکر میں ہو گا ۔ 
حضرت ابراہیم کرمانی رحمتہ اللہ تعالیٰ علیہ نے فرمایا ہے ۔اگر خواب دیکھنے والا پارسا نہیں ہے ۔ تو اس کو دین کے شغلول سے غم و اندوہ حاصل ہو گا ۔ اور اگر دیکھے کہ کوئی مرد بیڑی لگے ہوئے جارہا ہے دلیل ہے کہ اس کا کیا ہوا کام پورا ہو جائے گا ۔
حضرت جعفر صادق ؑ نے فرمایا ہے کہ خواب میں ایسا قید خانہ دیکھنا جو معلوم ہے ۔ مردا پانے پر دلیل ہے اور عاقبت نیک ہے ۔ فرمان حق تعالیٰ ہے ۔ قال رب السجن احب الی مھاید عوننی الیہ(کہ خواب میں قید خانہ زندوں کی قبر ہے اور بلا کی منزل ہے اور دوستوں کی آزمائش اور دشمنوں کی خوشی ہے )
اور اگر دیکھے کہ قید خانے میں گیا ہے اور جلدی نکلا ہے ۔ دلیل ہے کہ پوری مراد پائے گا ۔ حضرت ابن سیرین نے فرمایا ہے کہ خواب میں قید خانہ قبر ہے ۔