تعبیرخواب

آبگینہ ( کا نچ ۔ بلو ر )

اگر خو اب میں دیکھے کہ آگ نے اس کو جلا یا نہیں ہے تو دلیل ہے کہ کر ا ہت (کرا ہت سے :تکلیف سے ) کے ساتھ سفر کرے گا اور اگر آگ کو بھڑ کتا ہے تو دلیل ہے کہ تپ سے بیما ر ہو گااور اگر دیکھے کہ آگ نے اس کا جسم جلا دیا ہے ، دلیل سے کہ جلن کے مطا بق اس کو ر نج و نقصا ن پہنچے گا اور اگر کو ئی دیکھے کہ ا س کے گھر میں آگ لگ پڑ ی ہے اور اس کے سارے جسم کو جلا دیا ہے اور بھڑ کتی ہے اور اس کے دل میں اس سے خوف اور دہشت (دہشت : ڈر ، خو ف ) نہیں آئی ہے تو دلیل ہے کہ اس کو محنت اور مصیبت کے سبب بیماری اور ضعف ( ضعف : کمز وری)آئے گا۔جیسے سر دی ، طاعون ، آبلہ اور سر خہ و غیر ہ ۔ اور اگر دیکھے کہ آگ کو پکڑ لیا ہے تو دلیل ہے کہ اسی قدر بادشاہ سے مال حر م ملے گا۔ اور دیکھے کہ آگ دھو ئیں دار ہے تو دلیل ہے کہ اس کو مال حر ام محنت اور ر نج سے ملے گااور بہت ساجھگڑ ا دیکھے گا ۔ اگر دیکھے کہ اس کو آگ سے گر می اور تپش پہنچی ہے تو دلیل ہے کہ کو ئی شخص اس کی غیبت ( غینت :چغلی ) کرتا ہے ۔
حضر ت کر مانی رحمتہ علیہ نے فرمایا ہے کہ کو ئی خوا ب میں آگ کے شعلیلوگو ں پر ڈالتا ہے کہ لو گو ں عد اوت اور دشمنی ڈالے گااور اگر سودا گر خواب میں دیکھے کہ اس کی دکان اور سامان کو آگ لگی ہے تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس کا سامان بر باد ہو گایا اس درم کی چیز تین درم میں فر و خت کر ے گااور کسی پر شفقت(شفقت: مہر بانی ) نہ کر ے گا۔
اگر دیکھے کہ کسی کے گھر میں آگ لگی ہے تو اس امر کی دلیل ہے کہ وہ آدمی جنگ اور فتنہ اور بادشاہ کے ظلم میں گر فتار ہو گا اور اگر دیکھے کہ آگ نے اس کا کپڑ ا جلا دیا ہے تو دلیل ہے کہ اپنو ں کے ساتھ لڑے گااور مال کے سبب سے غم نا ک ہو گا اگر کو ئی بڑ ی آگ زمین پر دیکھے تو دلیل ہے کہ اس علاقے پر جنگ اور فتنہ ہو گا اور اگر کو ئی جلی ہو ئی چیز دیکھے تو دلیل ہے کہ عورتوں کی و جہ سے کسی کے ساتھ لڑے گا۔ اگر دیکھے کہ کسی شہر یا محل یا سر ائے میں آگ لگی ہے اور سب کچھ جلا دیا ہے اور آگ شعلہ مارتی ہے اور آواز خوفناک دیتی ہے تو دلیل ہے کہ اس جگہ میں کارزار ( کارزار : لڑ ائی ، جنگ) یا سخت بیماری پڑ ے گی ۔
اگر دیکھے کہ آگ نے کچھ چیز یں جلا دی ہیں اور کچھ چو ڑ دی ہیں اور خو ف ناک آواز نہیں دیتی ہے تو اس امرکی دلیل ہے کہ اس مو ضع میں لڑ ائی ہو گی اوراگرشعلے روشن نہیں ہیں تو سخت بیماری پڑ ے گی اور اگر آگ دھو ئیں کے ساتھ دیکھے ۔ تو دلیل ہے کہ اپنے کامو ں میں ڈر اور دہشت دیکھے گااور اگر دیکھے کہ آگ آسما ن سے گر ی اور اس نے شہر یا محضلہ ے اسر ا ئے کو جلا دیا ہے تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس شہر یا جگہ پر بلا اور فتنہ پڑ ے گا اور اگر دیکھے کہ خو فنا ک آواز تھی اور آ گ شعلے مارتی تھی ۔ لیکن جس جگہ پڑ ی ہے شعلے نہیں مارے ہیں تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس جگہ زبا نی جھگڑ ا اور فساد ہوگا۔
اگر دیکھے کہ زمین کے نیچے سے خوف نا ک آگ بکلی ہے اور آسما ن کی طر ف گئی ہے تو دلیل ہے کہ اس جگہ کے لوگ خد ا تعالیٰ کے پیا روں کے ساتھ اس آگ کی طاقت کے مطابق جھو ٹ اور بہتا ن کے ساتھ لڑ ائی لڑیں گے اور اگر دیکھے کہ آگ ( بے تحاشا: بے دھڑ ک ) بے تحا شہ جگہ بجگہ جاتی ہے اور وہ آگ کچھ تکلیف نہیں دیتی ہے تو دلیل ہے کہ صا حب خواب فا ئد ہ حا صل کر ے گا اور اگر درویش ہے تو مالد ار ہو گا۔
حضر ت اثعث رحمتہ علیہ نے فرمایا ہے کہ اگر کو ئی شخص خواب میں دیکھے کہ آگ آسما ن سے بارش کی طر ح بر ستی ہے تو دلیل ہے کہ اس جگہ پر بادشا ہوں کی طر ف سے خونر یز ی ( خو نر یز ی : جنگ لڑ ائی وغیر ہ ) اور بلاآئے گی اوراگردیکھے کہ آسما ن سے آگ آئی اور اس کے کھانے کی چیز وں کو جلا دیا تو دلیل ہے کہ اس کی عبا دت حق تعالیٰ کے نز دیک قبو ل ہو ئی ہے ۔ فر ما ن حق تعا لیٰ ہے: بقر با ن یا کلہ النا ر ( قر بانی کہ اس کو آ گ کھا ئے گی)
اگر دیکھے کہ آسما ن سے آگ آرہی ہے اور کسی چیز کو نہیں جاتی ہے تو یہ دلیل حق تعالیٰ کے خو ف کی ہے ۔ فر مان حق تعالیٰ ہے ۔ عنا ب النا ر التی کنتم بھا تکنبو ن ( آگ کا عذاب جس کو تم جھٹلاتے تھے اور اس کو بادشاہ سے خو ف ہوگا اور اگر دیکھے کہ بڑی آگ سے سر ے پر بیٹھے ہو ئے گر م ہو رہا تھا تو اس امر کی دلیل ہے کہ ایک بز ر گ بادشاہ کے نزدیک ہو گا اور اگر دیکھے کہ کو ئی چیز آگ پر پکار ہا تھا تو دلیل ہے کہ دین اور دنیا کا شغل تما م ہو گا۔
اگر دیکھے کہ آگ زمین پر اتر ی اور زمین کی سبز ی کو جلا تی ہے تو دلیل ہے کہ اس ملک میں خد ا نخو استہ نا گہا نی مو ت بہت آئے گی اور اگر دیکھے کہ ایک بڑی آگ نے قبہ (قبہ : گنبد وغیر ہ) یا منا رہ کو جلا دیا ہے تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس جگہ کا بادشاہ مر ے گا۔ بعض تعبیر بیا ن کرنے والے کہتے ہیں کہ اگر کوئی دیکھے کہ آگ زمین سے نکل کر روشن ہو ئی ہے تو دلیل ہے کہ اس جگہ خز انہ ہو گا۔
حضر ت جعفر صادق رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فر مایا ہے کہ اگر خو ا ب میں دیکھے کہ آ گ کے ٹکڑے کھاتا ہے تو اس امر کی دلیل ہے کہ یتیموں کا ما ل کھا تا ہے ۔ فرما ن حق تعالیٰ ہے ۔ النین یا کلو ن امو ال الیتمی ظلما انما یا کلو ن فی بطو نھم نا را و سیصلو ن سعیر ا ( جو لو گ یتیمو ں کا مال ظلم سے بھر تے ہیں وہ اپنے پٹیو ں میں آگ کھاتے ہیں اور وہ جلد ی دوزخ میں جائیں گے)
اگر دیکھے کہ اس کے منہ سے آگ نکلتی ہے تو اس امر کی دلیل ہیکہ جھو ٹی بات اور بہتا ن ( بہتا ن : جھو ٹا الزام ، تہمت و غیر ہ ) لگا تا ہے اور اگر دیکھے کہ ہر جگہ آگ جلتی ہے تو دلیل ہے کہ ر عیت اوربادشاہی لو گو ں میں ایلچی کاکام کرے گااور اگر دیکھے کہ اس کے پہلو میں آگ روشن ہے اور کو ئی نقصا ن نہیں کر تی ہے تو دلیل ہے کہ اس کو نیکی پہنچے گی ۔ فرمان حق تعالیٰ ہے ۔افر اء یتم النا ر التی تو رون ( کیا تم نے اس آگ کو دیکھا ہے کہ جس کو تم روشن کر تے ہو)
اگر دیکھے کہ بڑی آگ لکڑ یوں کو جلا تی ہے تو فتنہ ( فتنہ : فساد ، لڑ ائی وغیر ہ ) اور جنگ پر دلیل ہے ۔فر مان حق تعا لیٰ ہے ۔ کلما او قد و نارا للحر ب ( جب وہ لڑائی کے لئے آگ بھڑکاتے ہیں )
اگر خواب میں دیکھے کہ آگ لوگوں کو جلا تی ہے تو دلیل ہے کہ اس کو دشمنو ں پر فتح ہو گی اور اگر دیکھے کہ آگ نے اس کو جلا دیا اور اس میں روشنی نہ تھی تو دلیل ہے کہ مر ض سرسام سے بیما ر ہو گا اور اگر اس آگ میں نو ر دیکھے تو دلیل ہے کہ اس کے خو یشو ں اور فر زند وں میں سے کسی کے یہا ں بچہ آئے گاکہ لو گ اس کی تعر یف کریں گے اور اس نو ر آتش کے بر ابر بز ر گی اور مال پائے گااور اگر رزمگاہ ( رزمگاہ : مید ان جنگ ) میں آگ دیکھے تو یہ سخت بیما ریو ں کی دلیل ہے جیسے آبلہ ، طاعو ن ، سر سام مر گ باگہانی وغیر ہ ۔ خد ا نخو استہ ۔
اگر آگ کو دھو ئیں کے ساتھ دیکھے تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس کو بادشاہ سے ڈر اور خو ف ہو گا ۔ اور اگر آگ کو بازار میں دیکھے تو یہ بازار والوں کی بے دینی کی دلیل ہے کہ بازار والے تجارت میں انصاف نہیں کرتے ہیں اور خرید ی ہو ئی چیز وں میں جھو ٹ بو لتے ہیں اور اگر کسی ملک میں آگ لگی ہوئی دیکھے تو دلیل ہے کہ وہا ں کے لو گ بادشا ہ کے ساتھ لڑ تے ہیں اور اس سے رعایا پر ظلم ہوتا ہے ۔
اگر نا معلو م مہینے میں آگ دیکھے تو نے دینی کی دلیل ہے اور اگر کسی کے کپڑ وں کو آگ لگی ہوئی دیکھے تو دلیل ہے کہ اس پر مصیبت اور دہشت ( دہشت : خو ف ، ڈر ) اور خوف پڑ ے گا۔ اور اپنے آپ کو آگ پر کھڑ ا ہو ا دیکھے تو اس امر کی دلیل ہے کہ اس کو رنج پہنچے گا۔