تعبیرخواب

کشتن (مارنا)

حضرت ابن سیرین رحمۃ اﷲ علیہ نے فرمایا ہے اگر دیکھے کہ کسی کو مارا ہے اور اس کا سر کاٹا نہیں ہے۔ دلیل ہے کہ تو نگر آدمی سے اس کو خیر اور نیکی پہنچے گی اور بعض اہل تعبیر نے بیان کیا ہے کہ مارنے والا مرے ہوئے پر ظلم کا اندیشہ کرے گا۔ اور اگر دیکھے کہ اس کو کسی نے مارا ہے۔ دلیل ہے کہ اس کی عمر دراز ہو گی۔ حضرت ابراہیم کرمانی رحمۃ اﷲ علیہ نے فرمایا ہے۔ اگر دیکھے کہ اس کو کسی نے مارا ہے تو خیر و منفعت پر دلیل ہے۔ اگر دیکھے کہ ایک جماعت کو لوگوں نے ظلم سے مارا ہے۔ دلیل ہے کہ اس عمر کی دراز ہو گی اور بادشاہ سے خیر و منفعت پہنچے گی۔ فرمان حق تعالیٰ ہے۔ ومن قتل مظلوما فقد جعلنا لولیہ سلطانا فلا یسرف فی القتل (اور جومار ڈالا گیا ظلم سے تو ہم نے اس کے ولی کو غلبہ دیا ہے وہ قتل میں زیادتی نہ کرے۔ ) اور اگر دیکھے کہ کسی کو ظلم سے مارا ہے دلیل ہے کہ گناہ گار اور ظلم ہو گا اور حق تعالیٰ اس پر کسی کو مقرر کرے گا تا کہ اس کو ستائے ۔ فرمان حق تعالیٰ ہے کہ ولا تقتلو اولادکم الایہ ( اپنی اولاد کو قتل نہ کرو۔ آخر آیت تک ) اور بعض کہتے ہیں کہ فرزند پر ظلم کرنا ہر طرح سے دنیا کی عزت ہے اور اگر دیکھے کہ اس نے کسی کو مارا اور اس کے جسم سے خون جاری ہوا ہے۔ دلیل ہے کہ اسی قدر مال پائے گا۔ اور اگر اس کے جسم کو خون آلودہ دیکھے۔ دلیل ہے کہ اپنی مال سے اس کو کچھ دے گا۔ اور اگر دیکھے کہ خون جاری ہوا ہے دلیل ہے کہ مارنے والے کا دین برباد ہو گا۔ حضرت جعفر صادق علیہ السلام نے فرمایا ہے کہ اگر دیکھے کہ کسی چوپائے کو یا زمین کے کیڑے مکوڑے کو مارا ہے دلیل ہے کہ دشمن پر فتح پائے گا اور جو شخص اس حیوان کی طرف منسوب ہے اس کو مغلوب کرے گا۔ اور قاتل کو خون آلود دیکھنا بے وفا اور ظلم شخص کو دیکھنا ہے۔