تعبیرخواب

یخ (برف جمی ہوئی)

دانیال علیہ السلام فرماتے ہیں کہ یخ یعنی برف جمی ہوئی کا دیکھنا خواب میں کوئی غم و اندوہ ہوا کرتا ہے۔ خاص کر جب کہ اس کو اپنے وقت پر دیکھے۔ اور اگر کوئی دیکھے کہ وہ برف جمی ہوئی کھا رہا تھا۔ تو دلیل یہ ہے کہ وہ روزی بہت سی پائے۔ مگر یہ کہ جب وہ برف بہت سی اور بے اندازہ دیکھے کہ جو کہ اپنی وقت یعنی سردیوں کے موسم میں ہو۔ اور اگر دیکھے کہ وہ کچھ برف صاف ستھری اپنے گھر کو لے جا رہا تھا تو دلیل ہے کہ بقدر اس برف کے وہ کوئی مال جمع کرے۔
کرمانی رحمۃاللہ علیہ کہتے ہیں کہ اگر کوئی دیکھے کہ گرمیوں کے موسم میں کوئی برف پاکیزہ اور صاف تھی تو دلیل یہ ہے کہ وہ کوئی مال حلال جمع کرے۔ اور اگر دیکھے کہ برف میلی کچیلی اور تلخ سی تھی تو دلیل یہ ہے کہ وہ کوئی مال کو جمع کرے جو کہ حرام سے ہووے۔ اور اگر سردیوں کے موسم میں برف پاکیزہ صاف خواب میں دیکھے تو دلیل ہے کہ وہ اپنی عیش کو خواب میں اچھی طرح گزارے اور اپنے روزگار سے منفعت دیکھے اور اس کی دوستوں کے دل اس سے شاد ہوویں۔
حضرت جابر مغربی رحمۃ اللہ علیہ کہتے ہیں کہ درمیان سرد ملکوں کے سردیوں کے موسم میں برف کو خواب میں دیکھنا دلیل خیرو منفعت اور تندرستی پر ہووے اور گرم ملکوں میں دلیل قحط اور تنگی اور اندوہ پر ہو۔ اور بعض معبروں نے کہا ہے کہ یخ یعنی برف جمی ہوئی اور برق یا بجلی کا خواب میں دیکھنا جو درمیان سرد ملکوں کے ہو دلیل فراخی نعمت پر ہوتا ہے اور گر م ملکوں میں دلیل قحط اور ندوہ پر ہوا کرتا ہے۔
امام جعفر صادق رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ یخ برف جمی ہوئی خواب میں چھ وجہوں پر ہوتی ہے:
(1) روزی فراخ 
(2) زندگانی
(3) مال 
(4) نرخ ارزاں 
(5) غم و اندوہ
(6) قحط و تنگی۔